Matric result 2020 – paper checking – Important news students

0
33

Important news for matriculation students

Important news for matriculation students, the health department has allowed the marking of pamphlets, while SOPs have also been issued. According to the details, the marking of matriculation exam papers was stalled due to measures taken to curb the spread of Corona virus.

After which SOPs have been agreed between the Department of Education and the Department of Health regarding the marking of examinations. After which 20 point SOPs have also been issued. The main point in SOPs is to keep a distance of more than 6 feet between the paper checkers.

Matric result 2020

میٹرک کے طلبا کیلئے اہم خبر

میٹرک کے طلبا کیلئے اہم خبر، محکمہ صحت نے پرچوں کی مارکنگ کی اجازت دے دی، جبکہ ایس او پیز بھی جاری کردیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے اقدامات کے پیش نظر میٹرک امتحانات کے پرچوں کی مارکنگ تعطل کا شکار ہو گئی تھی۔ جس کے بعد محکمہ ایجوکیشن اور محکمہ صحت کے درمیان امتحانات کی مارکنگ کے حوالے سے ایس اوپیز پر اتفاق کر لیا گیا ہے۔جس کے بعد 20 نکاتی ایس اوپیز بھی جاری کر دیئے گئے ہیں۔ ایس او پیز میں اہم نکات پیپرچیکرز کے مابین 6 فٹ سے زائد کا فاصلہ رکھنا ہے

It has been informed that the marking of examinations will start in June after the SOPs are agreed upon. Earlier, Punjab Education Minister Murad Rass had informed about the marking of examinations and said that the marking of matriculation papers would be started from June 15 while the results would be announced in 90 days.

Practical will not be taken, everyone will be given 50% marks. The remaining 50% marks will be given according to the marks obtained in the papers. Children who do not like the present given policy can get the results of the examinations as per their wish next year. To retake the exam, the knowledge seeker has to contact the board by July 15.

بتایا گیا ہے کہ ایس او پیز پر اتفاق ہونے کے بعد امتحانات کی مارکنگ جون میں شروع کر دی جائے گی۔ یاد رہے اس سے قبل صوبائی وزیر تعلیم پنجاب مراد راس نے امتحانات کی مارکنگ سے آگاہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ میٹرک کے پیپرز کی مارکنگ 15 جون سے شروع کر دی جائے گی جبکہ 90 روز میں نتائج کا اعلان کر دیا جائے گا۔کسی بچے کا پریکٹیکل نہیں لیا جائے گا، سب کو اس کے 50 فیصد نمبر دیئے جائیں گے۔ باقی 50 فیصد نمبر پیپرز میں حاصل کردہ نمبروں کے مطابق دیئے جائیں گے، جن بچوں کو موجودہ دی گئی پالیسی پسند نہیں وہ آئندہ سال اپنی خواہش کےمطابق امتحانات دے کرنتائج حاصل کر سکتے ہیں۔ دوبارہ امتحانات دینے کیلئے طلب علم کو 15 جولائی تک بورڈ سے رابطہ کرنا ہوگا

He said that the report card issued by the board would give a good idea of ​​the performance of the children. According to the government’s policy, students with ninth and eleventh grade results will be promoted to the next grade, but the marking process was stalled due to lack of permission from the health department. However, paper marking has now been approved by the health department.

نہوں نے کہا کہ بورڈکی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کارڈ میں بچوں کی کارکردگی کا باخوبی اندازہ لگایا جا سکے گا۔ حکومت کی بنائی گئی پالیسی کے مطابق نویں اور گیارہویں جماعت کا رزلٹ رکھنے والے طلباء کو اگلی جماعتوں میں پروموٹ کر دیا جائے گا، تاہم محکمہ صحت کی اجازت نہ ملنےکے باعث مارکنگ کا سلسلہ تعطل کا شکار تھا ۔ تاہم اب محکمہ صحت کی جانب سے پیپر مارکنگ کی اجازت دے دی گئی ہے

CLICK HERE

Matric result 2020 – paper checking – Important news students